اللہ کے نام سے جو رحمان و رحیم ہے بِسْمِ ٱللَّهِ ٱلرَّحْمَٰنِ ٱلرَّحِيمِ
تباہی ہے ڈنڈی مارنے والوں کے لیے وَيْلٌ لِّلْمُطَفِّفِينَ۝۱
جن کا حال یہ ہے کہ جب لوگوں سے لیتے ہیں تو پورا پورا لیتے ہیں ٱلَّذِينَ إِذَا ٱكْتَالُوا۟ عَلَى ٱلنَّاسِ يَسْتَوْفُونَ ۝۲
اور جب ان کو ناپ کر یا تول کر دیتے ہیں تو انہیں گھاٹا دیتے ہیں وَإِذَا كَالُوهُمْ أَو وَّزَنُوهُمْ يُخْسِرُونَ ۝۳
کیا یہ لوگ نہیں سمجھتے کہ ایک بڑے دن، أَلَا يَظُنُّ أُو۟لَٰٓئِكَ أَنَّهُم مَّبْعُوثُونَ ۝۴
یہ اٹھا کر لائے جانے والے ہیں؟ لِيَوْمٍ عَظِيمٍ ۝۵
اُس دن جبکہ سب لوگ رب العالمین کے سامنے کھڑے ہوں گے يَوْمَ يَقُومُ ٱلنَّاسُ لِرَبِّ ٱلْعَٰلَمِينَ ۝۶
ہرگز نہیں، یقیناً بد کاروں کا نامہ اعمال قید خانے کے دفتر میں ہے كَلَّآ إِنَّ كِتَٰبَ ٱلْفُجَّارِ لَفِى سِجِّينٍ ۝۷
اور تمہیں کیا معلوم کہ وہ قید خانے کا دفتر کیا ہے؟ وَمَآ أَدْرَىٰكَ مَا سِجِّينٌ ۝۸
ایک کتاب ہے لکھی ہوئی كِتَٰبٌ مَّرْقُومٌ ۝۹
تباہی ہے اُس روز جھٹلانے والوں کے لیے وَيْلٌ يَوْمَئِذٍ لِّلْمُكَذِّبِينَ ۝۱۰
جو روز جزا کو جھٹلاتے ہیں ٱلَّذِينَ يُكَذِّبُونَ بِيَوْمِ ٱلدِّينِ ۝۱۱
اور اُسے نہیں جھٹلاتا مگر ہر وہ شخص جو حد سے گزر جانے والا بد عمل ہے وَمَا يُكَذِّبُ بِهِۦٓ إِلَّا كُلُّ مُعْتَدٍ أَثِيمٍ ۝۱۲
اُسے جب ہماری آیات سنائی جاتی ہیں تو کہتا ہے یہ تو اگلے وقتوں کی کہانیاں ہیں إِذَا تُتْلَىٰ عَلَيْهِ ءَايَٰتُنَا قَالَ أَسَٰطِيرُ ٱلْأَوَّلِينَ ۝۱۳
ہرگز نہیں، بلکہ دراصل اِن لوگوں کے دلوں پر اِن کے برے اعمال کا زنگ چڑھ گیا ہے كَلَّا ۖ بَلْ ۜ رَانَ عَلَىٰ قُلُوبِهِم مَّا كَانُوا۟ يَكْسِبُونَ ۝۱۴
ہرگز نہیں، بالیقین اُس روز یہ اپنے رب کی دید سے محروم رکھے جائیں گے كَلَّآ إِنَّهُمْ عَن رَّبِّهِمْ يَوْمَئِذٍ لَّمَحْجُوبُونَ ۝۱۵
پھر یہ جہنم میں جا پڑیں گے ثُمَّ إِنَّهُمْ لَصَالُوا۟ ٱلْجَحِيمِ ۝۱۶
پھر اِن سے کہا جائے گا کہ یہ وہی چیز ہے جسے تم جھٹلایا کرتے تھے ثُمَّ يُقَالُ هَٰذَا ٱلَّذِى كُنتُم بِهِۦ تُكَذِّبُونَ ۝۱۷
ہرگز نہیں، بے شک نیک آدمیوں کا نامہ اعمال بلند پایہ لوگوں کے دفتر میں ہے كَلَّآ إِنَّ كِتَٰبَ ٱلْأَبْرَارِ لَفِى عِلِّيِّينَ ۝۱۸
اور تمہیں کیا خبر کہ کیا ہے وہ بلند پایہ لوگوں کا دفتر؟ وَمَآ أَدْرَىٰكَ مَا عِلِّيُّونَ ۝۱۹
ایک لکھی ہوئی کتاب ہے كِتَٰبٌ مَّرْقُومٌ ۝۲۰
جس کی نگہداشت مقرب فرشتے کرتے ہیں يَشْهَدُهُ ٱلْمُقَرَّبُونَ ۝۲۱
بے شک نیک لوگ بڑے مزے میں ہوں گے إِنَّ ٱلْأَبْرَارَ لَفِى نَعِيمٍ ۝۲۲
اونچی مسندوں پر بیٹھے نظارے کر رہے ہوں گے عَلَى ٱلْأَرَآئِكِ يَنظُرُونَ ۝۲۳
ان کے چہروں پر تم خوشحالی کی رونق محسوس کرو گے تَعْرِفُ فِى وُجُوهِهِمْ نَضْرَةَ ٱلنَّعِيمِ ۝۲۴
ان کو نفیس ترین سر بند شراب پلائی جائے گی جس پر مشک کی مہر لگی ہوگی يُسْقَوْنَ مِن رَّحِيقٍ مَّخْتُومٍ ۝۲۵
جو لوگ دوسروں پر بازی لے جانا چاہتے ہوں وہ اِس چیز کو حاصل کرنے میں بازی لے جانے کی کوشش کریں خِتَٰمُهُۥ مِسْكٌ ۚ وَفِى ذَٰلِكَ فَلْيَتَنَافَسِ ٱلْمُتَنَٰفِسُونَ ۝۲۶
اُس شراب میں تسنیم کی آمیزش ہوگی وَمِزَاجُهُۥ مِن تَسْنِيمٍ ۝۲۷
یہ ایک چشمہ ہے جس کے پانی کے ساتھ مقرب لوگ شراب پئیں گے عَيْنًا يَشْرَبُ بِهَا ٱلْمُقَرَّبُونَ ۝۲۸
مجرم لوگ دنیا میں ایمان لانے والوں کا مذاق اڑاتے تھے إِنَّ ٱلَّذِينَ أَجْرَمُوا۟ كَانُوا۟ مِنَ ٱلَّذِينَ ءَامَنُوا۟ يَضْحَكُونَ ۝۲۹
جب اُن کے پاس سے گزرتے تو آنکھیں مار مار کر اُن کی طرف اشارے کرتے تھے وَإِذَا مَرُّوا۟ بِهِمْ يَتَغَامَزُونَ ۝۳۰
اپنے گھروں کی طرف پلٹتے تو مزے لیتے ہوئے پلٹتے تھے وَإِذَا ٱنقَلَبُوٓا۟ إِلَىٰٓ أَهْلِهِمُ ٱنقَلَبُوا۟ فَكِهِينَ ۝۳۱
اور جب انہیں دیکھتے تو کہتے تھے کہ یہ بہکے ہوئے لوگ ہیں وَإِذَا رَأَوْهُمْ قَالُوٓا۟ إِنَّ هَٰٓؤُلَآءِ لَضَآلُّونَ ۝۳۲
حالانکہ وہ اُن پر نگراں بنا کر نہیں بھیجے گئے تھے وَمَآ أُرْسِلُوا۟ عَلَيْهِمْ حَٰفِظِينَ ۝۳۳
آج ایمان لانے والے کفار پر ہنس رہے ہیں فَٱلْيَوْمَ ٱلَّذِينَ ءَامَنُوا۟ مِنَ ٱلْكُفَّارِ يَضْحَكُونَ ۝۳۴
مسندوں پر بیٹھے ہوئے ان کا حال دیکھ رہے ہیں عَلَى ٱلْأَرَآئِكِ يَنظُرُونَ ۝۳۵
مل گیا نا کافروں کو اُن حرکتوں کا ثواب جو وہ کیا کرتے تھے هَلْ ثُوِّبَ ٱلْكُفَّارُ مَا كَانُوا۟ يَفْعَلُونَ ۝۳۶